Pak Dunya ! A Resource that you can Trust!
If this is your first visit, be sure to check out the FAQ by clicking the link above. You may have to register before you can post: click the register link above to proceed. To start viewing messages, select the forum that you want to visit from the selection below.

Not a Member ? Join Us

Pak Dunya ! A Resource that you can Trust!

Pak Dunya Urdu Forum
 
HomePortalFAQSearchUsergroupsRegisterLog inGallery

Iphone 6 Pluse Screen Replacement  Jobs  Health Send Free MOBILE SMS


Share | 
 

 گوگل: جی میل ڈیٹا کی ترسیل بند

View previous topic View next topic Go down 
AuthorMessage
Maha Khan

avatar

Gender : Female Posts : 48
Points : 141
Reputation : 1
Join date : 2010-04-14
Location : HEAVEN INSHALLAH

PostSubject: گوگل: جی میل ڈیٹا کی ترسیل بند   Fri Nov 12, 2010 7:32 am

دنیا میں انٹرنیٹ کی سب سے بڑی کمپنی گوگل فیس بک اور دیگر ویب سائٹس کو جی میل ڈیٹا کی فیڈ دینا بند کر دے گی۔

گوگل کا کہنا ہے کہ جی میل کانٹیکٹس اب خودبخود دوسری ویب سائٹس کو منتقل نہیں ہو گے۔

گوگل کا کہنا ہے کہ اس کی پالیسی میں یہ تبدیلی بنیادی طور پر فیس بک کے لیے ہے اور اس کا اطلاق اگلے چند ہفتوں میں ہو گا۔

فیس بک اور کئی دوسری ویب سائٹس گوگل کے ایپلیکیشن پروگرامنگ انٹرفیس ( اے پی آئی ) کو استعمال کرتی تھیں جس کے ذریعے ان کے صارفین اپنے جی میل کانٹیکٹس کو خودبخود امپورٹ کر لیتے تھے جس سے انہیں اپنے پروفائل بھرنے میں آسانی ہوتی تھی اور دوسری صارفین کو ڈھونڈنے میں بھی آسانی ہوتی تھی۔

اب گوگل یہ سہولت صرف ان ویب سائٹس اور سروسز کو مہیا کرے گی جو دوسروں کو بھی اپنے ڈیٹا تک رسائی دیں گی۔

گزشتہ ماہ اس بات کے سامنے آنے کے بعد کہ گوگل نے اپنے سٹریٹ ویو پروجیکٹ کے دوران لوگوں کا ذاتی ڈیٹا جمع کیا ہے برطانیہ کے انفارمیشن کمشنر کے دفتر نے اس سال کے شروع میں اس معاملے کی تحقیقات کی تھیں۔

گوگل نے اس وقت کہا تھا کہ کوئی قابل ذکر ڈیٹا جمع نہیں گیا گیا لیکن اس کے بعد گوگل یہ اعتراف کر چکا ہے کہ لوگوں کی ذاتی ای میل اور پاس ورڈز کی نقل کی گئی تھی۔

فرانس، جرمنی اور کینیڈا سمیت کئی ممالک میں پرائویسی کے نگراں ادارے اس معاملے کی تحقیقات کر چکے ہیں۔

گوگل کے سینئر وائس پریذیڈنٹ ایلن یوسٹس نے اپنے بلاگ لکھا تھا کہ کمپنی اس بات پر شرمندہ ہے کہ لوگوں کی ذاتی معلومات اکھٹا کی گئیں۔

انہوں نے کہا کہ کچھ مواقع پر لوگوں کی ذاتی ای میل، یو آر ایل اور پاس ورڈز تک حاصل کیے گئے۔

برطانیہ کے پرائیویسی کے نگراں ادارے کا کہنا تھا کہ اس کی اپنی تحقیقات تو اس برس جولائی میں مکمل ہو چکی ہیں لیکن ادارے نے اس سلسلے میں ہونے والی بین القوامی تحقیقات پر نظر رکھی ہوئی ہے۔
Back to top Go down
http://bestrepair.ae/
 
گوگل: جی میل ڈیٹا کی ترسیل بند
View previous topic View next topic Back to top 
Page 1 of 1

Permissions in this forum:You cannot reply to topics in this forum
Pak Dunya ! A Resource that you can Trust! :: IT Cafe :: General Discussion-
Jump to: